کرکٹ جسم میں خون بن کردوڑتی ہے، ثانیہ مرزا

ممبئی: بھارتی ٹینس پلیئر ثانیہ مرزاکہتی ہیں کہ کرکٹ ان کے جسم میں خون بن کر دوڑتی ہے، انھوں نے اسے اپنا ’خاندانی‘ کھیل قرار دے دیا، ثانیہ کا کہنا ہے کہ ٹینس مقابلوں میں صرف ڈبلز تک محدود رہنا ذہنی طور پر کافی مشکل ہے، سال کے اختتامی دونوں ایونٹس بھی جیتنا چاہتی ہوں۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے کرکٹ کلب آف انڈیا کی جانب سے تاحیات اعزازی ممبرشپ دیے جانے کے موقع پر کیا۔ ثانیہ مرزا نے کہا کہ میرے شوہر شعیب ملک ایک کرکٹر ہیں، ہماری فیملی میں ہر کوئی کرکٹ کھیلتا ہے، یہ کھیل میرے خون میں شامل ہے، میرے والد کرکٹ کھیلا کرتے تھے، میرے ایک انکل تو رنجی ٹرافی بھی کھیل چکے ہیں۔

میں نے خود یہاںکرکٹ کلب آف انڈیا میں چند ایونٹس میں حصہ لیا ہے۔ ثانیہ مرزا نے ٹینس کورٹس پر اپنی کامیابیوں کے حوالے سے کہا کہ میں اب خود کو صرف ڈبلز مقابلوں تک محدود کرچکی، اس سے جسمانی طور پر تو مجھے کافی فائدہ ملا مگر ذہنی طور پر کافی مشکل ہے کیونکہ سال کے 25 ہفتوں میں خود کو اپنے کھیل کے عروج پر رکھنا کافی مشکل ہوتا ہے۔