دنیا کا تیز ترین انسان یوسین بولٹ 200 میٹر کی دوڑ جیتنے کے بعد کیمرہ مین سے ٹکرا کر گر پڑا

یجنگ: دنیا کے تیز ترین انسان یوسین بولٹ نے ایک بار پھر 200 میٹر میں شاندار فتح حاصل کرتے ہوئے ایک نیا عالمی ریکارڈ بنا ڈالا لیکن تیز ترین ٹانگیں رکھنے والا انسان اپنے آپ پر قابو نہ پاسکا اور کیمرہ مین سے ٹکرا کر سر کے بل جا گرا۔

بیجنگ کے میدان میں 200 میٹر کی دوڑ کے عالمی چیمپیئن کے مقابلے کا آغاز ہوا تو دنیا بھر کی نظریں 100 میٹر کی ریس کے فاتح اور اس کے حریف جسٹن گاٹلین پر لگی ہوئی تھیں، ریس کے آغاز کے ساتھ ہی یوسین بولٹ نے برق رفتاری سے اپنے حریفوں کو ایک ایک کر کے پیچھے چھوڑنا شروع کردیا اور اختتام سے قبل وہ اور ان کا حریف جسٹن ایک قدم کے فاصلے پر ایک دوسرے پر قریب آگئے لیکن جیسے اچانک بولٹ کی ٹانگوں میں بجلی بھر گئی ہو اور وہ ایک لمحے میں اپنے حریف کو پیچھے چھوڑتے ہوئے فنشنگ لائن کو پار کر چکے تھے۔ بولٹ نے 200 میٹر کا فاصلہ 19.55 سیکنڈ میں طے کر کے اپنے ہی ریکارڈ کو توڑ ڈالا جب کہ انہوں نے یہ ریکارڈ 2012 کے لندن میں ہونے والے اولمپک میں بنایا تھا۔

یوسین بولٹ کی دوڑ تو یہاں ختم ہوگئی لیکن جب بولٹ جیت کے بعد تماشائیوں کی داد وصول کرتے ہوئے آگے بڑھ رہے تھے کہ ان کے پیچھے کوریج کرنے والا ایک کیمرہ مین اچانک ریڑھی یعنی سیگوے پر اپنا توازن قائم نہ رکھ سکا اور اس سے بے خبر بولٹ سے جا ٹکرایا جس پر وہ کیمرہ مین سے ٹکراتے ہوئے سر کے بل زمین پر گر پڑے اور تیز رفتار دوڑنے والی یہ ٹانگیں یہاں بولٹ کو گرنے سے نہ بچا سکیں۔ اس اتفاقی حادثے کی وجہ سے کچھ دیر کے لیے سیکورٹی الرٹ کردی گئی جب کہ بولٹ بھی حادثے میں بڑی چوٹ سے بال بال بچ گئے۔