Category: کراچی
Published on 15 September 2017

نیب کا کراچی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے دفتر پر چھاپہ،ریکارڈ ضبط

کراچی: 

قومی احتساب بیورو(نیب) نے سوک سینٹر میں  کے ڈی اے کے دفتر میں چھاپہ مار کر غیر قانونی الاٹمنٹ سے متعلق  ریکارڈ قبضے میں لے لیا۔

 

 نیب کی ٹیم نے سوک سینٹر میں کراچی ڈویلپمنٹ  اتھارٹی(کے ڈی اے) کے دفتر میں چھاپہ مارا اور اہم ریکارڈ قبضے میں لے لیا۔نیب حکام نے زمینوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کی شکایات پر کارروائی  کی ہے ۔چھاپے کے دوران اہم فائلیں قبضے میں لے لی گئیں  جب کہ غیر قانونی الاٹمنٹ سے متعلق ریکارڈ  کی چھان بین کی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ نیب حکام کی جانب سے متعدد بار کے ڈی اے کے دفاتر میں چھاپہ مار کارروائیاں کی گئی ہیں جس میں زمینوں کی غیر قانونی  خریدوفروخت کے حوالے سے  ریکارڈ قبضے میں لیا گیا  جب کہ کئی افسران کو زیر حراست رکھ کر تفتیش بھی کی جاتی رہی ہے۔

ADVERTISEMENT

Category: کراچی
Published on 15 September 2017

کراچی والوں ہوشیار! چند روز میں شدید گرمی پڑنے کا امکان

کراچی: 

محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ کراچی میں مون سون  بارشوں کا سلسلہ ختم ہوگیا  ہےاور آئندہ  دنوں میں گرمی کی شدت میں مزید اضافے کا امکان ہے۔

 

 ریجنل ڈائریکٹر محکمہ موسمیات شاہد عباس نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے  بتایا کہ کراچی میں رواں سال کا مون سون سسٹم اختتام پذیر ہوگیا ہے،شہرمیں مون سون کی بارشوں کا سلسلہ 15جولائی سے 15ستمبر تک ہوتاہے جب کہ شمالی علاقہ جات میں مون سون کا سلسلہ 30 ستمبر تک جاری رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں رواں سال مون سون سسٹم میں بارشوں کے چار سے پانچ اسپیل ہوئے ہیں تاہم مون سون کا یہ سلسلہ اب ختم چکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شہر میں اگلا ہفتہ گرم رہنے کا امکان ہے اور آنے والے چندروز کے دوران درجہ حرارت 37 ڈگری سینٹی گریڈ تک بڑھ سکتا ہے جب کہ سمندرمیں کوئی موسمیاتی سرگرمی ہوئی تو درجہ حرارت میں مزید اضافہ ہوگا۔

ADVERTISEMENT

Category: کراچی
Published on 31 August 2017

کراچی میں موسلا دھار بارش، 3 بچوں سمیت 13 افراد جاں بحق

کراچی: 

شہر قائد میں موسلادھار بارش کے باعث چھتیں گرنے اور کرنٹ لگنے سے 3 بچوں سمیت 13 افراد جاں بحق ہوگئے جب کہ متعدد علاقوں میں کئی کئی فٹ پانی جمع ہوگیا۔

 

کےکراچی میں وقفے وقفے سے تیز بارش کا سلسلہ جاری ہے جبکہ چھتیں گرنے اور کرنٹ لگنے  سے جاں بحق افراد کی تعداد 13 ہوگئی ہے۔ متعدد علاقوں میں کئی کئی فٹ پانی جمع ہوگیا ہے جس کے باعث شہریوں کو دفاتر اور کام پر جانے میں شدید پریشانی کا سامنا ہے۔ خراب موسم کے باعث کراچی سے شیڈول متعدد پروازیں بھی منسوخ ہوگئی ہیں اور اسکولوں کی چھٹی کا اعلان کردیا گیا۔

ADVERTISEMENT
 
 
 
 
Ad

 

کراچی میں کے الیکٹرک اور بلدیہ عظمی کی جانب سے ناخوشگوار صورت حال سے نمٹنے کے لیے مناسب اقدامات نہیں کیے جاسکے۔ لیاری ، نارتھ کراچی اور بلدیہ ٹاون میں 3 کمسن بچوں سمیت 4 افراد جاں بحق ہوگئے۔ بلدیہ ٹاؤن میں محمد عظیم ، لیاری میں جاوید احمد ، اورنگی ٹاؤن میں نصیر اور پرانی سبزی منڈی میں یسین نامی شخص جاں بحق ہوئے۔


Category: کراچی
Published on 23 August 2017

وسیم اکرم اور وقار یونس کی جوڑی بننے سے پہلے ہی ٹوٹ گئی

کراچی: 

 پاکستان سپر لیگ کی نئی فرنچائز ملتان سلطانز میں وسیم اکرم اور وقار یونس کی جوڑی بننے سے پہلے ہی ٹوٹ گئی۔

 

وسیم اکرم اور وقار یونس کو اپنے کھیلنے کے دور میں دنیا کی خطرناک ترین فاسٹ بولنگ جوڑی قرار دیا جاتا تھا، یہ پاکستان سپر لیگ کی نئی فرنچائز ملتان سلطانز میں یکجا ہونے جارہی تھی جہاں پر وسیم کو پہلے ہی ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز مقرر کیا جاچکا ہے، وقار یونس سے ہیڈ کوچ کی ذمہ داری کے لیے بات چیت جاری تھی جوکسی نتیجے پر پہنچے بغیر ختم ہوچکی، یہ بات ان شائقین کے لیے حیران کن نہیں جو ان دونوں کو ماضی کے دنوں سے جانتے ہیں، تب بھی ہمیشہ ہی وسیم اکرم اور وقار یونس میں مقابلہ رہا اور ان کے تعلقات کشیدہ رہے تھے۔

وقار یونس نے ویب سائٹ ’کرک انفو‘ سے بات چیت میں کہا کہ میری بات چیت ہوئی مگر کسی حتمی معاہدے پر نہیں پہنچ پائے، ملتان سلطانز کے مالکان اچھے لوگ ہیں، مجھے ان کی جانب سے ملنے والی آفر پر خوشی ہوئی تھی، میں وہاں پر وسیم اکرم کے ساتھ دوبارہ مل کر کام کرسکتا تھا، اگر ہم دونوں ایک ہی ٹیم کے لیے ایک ہی مقصد کی خاطر کام کرتے تو اچھا ہوتا، میں وسیم بھائی کے اپنی ٹیم تیار کرنے سے متعلق پلان کی کامیابی کے لیے دعاگو ہوں۔

ADVERTISEMENT
 
 
 
 
Ad

 

وقار یونس کی ایک رات قبل ایک نجی ٹی وی سے بات چیت سے بھی صاف محسوس ہوا کہ انھیں اصل مسئلہ ہی وسیم اکرم سے ہے، ان کا کہنا تھاکہ ’وسیم بھائی جو ٹیم چاہتے ہیں وہ بنائیں گے اور ممکنہ طور پر میں ان کے پلان کی راہ میں نہیں آؤں گا، ویسے بھی میں ان کے پلان میں کبھی شامل ہی نہیں تھا‘۔ انہوں نے مزید کہاکہ میں ہمیشہ سے ہی ملتان کا حصہ بننا چاہتا تھا کیونکہ میرا تعلق جنوبی پنجاب سے ہی ہے، اس فرنچائز کا حصہ نہ بن پانا میرے لیے مایوس کن ہے۔