سعودی عرب میں منشیات اسمگلنگ کے الزام میں ایک اور پاکستانی کا سرقلم

ریاض: سعودی عرب میں منشیات اسمگلنگ کرنے کے الزام میں ایک اور پاکستانی شہری کا سرقلم کردیا گیا۔

سعودی وزارت داخلہ کے مطابق منشیات اسمگلنگ کے الزام میں گرفتار پاکستانی ملزم ذوالفقارعلی محمد پیٹ میں منشیات چھپاکر اسمگلنگ کررہا تھا جس پر اسے سزائے موت دی گئی جس کے بعد سعودی عرب میں رواں برس سزائے موت پانے والے غیر ملکیوں کی تعداد 128 ہوگئی۔

گزشتہ سال سعودی عرب میں سزائے موت پانے والے غیر ملکیوں کی تعداد 87 تھی جس میں 13 پاکستانی بھی شامل تھے جب کہ 1995 میں ایک سال کے دوران سب سے زیادہ 192 افراد کے سر قلم کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کے قوانین میں زیادتی، قتل، مسلح ڈکیتی اور منشیات کی اسمگلنگ پر موت کی سزا مقرر ہے اور اس کا شمار دنیا کے ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں پر بڑے پیمانے پر مجرموں کو سزائے موت دی جاتی ہیں